Posts

Showing posts from July, 2021
 دل کی دھڑکن میں اچانک یہ اضافہ کیسا۔۔❤ اُسکے ہونٹوں پہ کہیں نام ھمارا تو نہیں
 وحشت کی تحقیق بجا ہے لیکن اتنا دھیان رہے ہر داڑی اور زلفوں  والا  دہشت گرد نہیں ہوتا!
 💔کیوں ناراض رھتے ھو میری نادان سی حرکتوں سے کچھ دن کی تو زندگی ھے پھر چلے جائیں گے ہمیشہ کے لئے.
 - " غصہ کرنے سے کیا ہو گا بھلا           کچھ بڑا کیجئے، نفرت کیجئیے
 سب سے الگ رکھتا ___ ہوں جناب❤ سوچ، مزاج، انداز، ____اور معیار اپنا
 دعوے دوستی کے مجھے نہیں آتے یار ایک جان ھے جب دل چاہے مانگ لینا.
 ❣خود اپنے ہی دم پر __جینے کی عادت ہے مجھے ہم  نے سیکھا ہی نہیں _ سہارا لینا  کسی  کا
 💔‏ﻣﯿﺮﮮ ﻟﻔﻈﻮﮞ ﺳﮯ ﻧﮧ ﮐﺮ ، ﻣﯿﺮﮮ ﮐﺮﺩﺍﺭ ﮐﺎ ﻓﯿﺼﻼ ،،💔 💔ﺗﯿﺮﺍ ﻭﺟﻮﺩ ﭨﻮﭦ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﺎ ، ﻣﯿﺮﯼ ﺣﻘﯿﻘﺖ ﮈﮬﻮﻧﮉتے ڈھونڈتے.
 ‏عمر ترتیب سے نہیں گزری اپنی ٹھیک ملنے کے وقت بچھڑے ہم جون ایلیاء
 تیرے بعد نظر نہیں آتی مجھے کوئی منزل کسی اور کا ہونا میرے بس کی بات نہیں
 ناراض ہونے کا شوق بھی پورا کر لو..👉 صاحب❤ لگتا ہے تمہیں ہم زندہ اچھے نہیں لگتے.
 -' نہ چھیڑ قصہ اے الفت بڑی لمبی کہانی ہے میں زمانے سے نہیں ہارا بس  کسی کی بات مانی ہے.
 وہ ایک انسان جو سویا ہی نہیں کئی راتوں سے اگر اسکی وجہ تم ہو_تو کیا ظالم نہیں ہو تم
وہ شخص جو کبھی ....دائرہ تھا زندگی کا سمٹا کچھ اس ادا سے  ...نقطہ بھی نہ رہا
 آغاز سے کیجیئے ہم سے محبت❤ اگر کوئی تھا بھی تو بھول جائیے
 بھولنے کی قسمیں___کھا کر بھی...                      میں نے ہر راہ پہ تجھے ہی سوچا ہے
 ﻣﺤﺒﺖ ﮐــﺎ ﺷــﻮﻕ ﻧــﮧ ﺭﮐﮭﯿﺌــﮯ   ﺍﺱ ﻣﯿــﮟ ﺳــﺎﻧﺲ ﺁﺗــﯽ ﻧﮩﯿــﮟ  ﺍﻭﺭ ،ﺟــﺎﻥ ﺟﺎﺗــﯽ ﻧﮩﯿــﮟ
 منافق نہیں ہوں ، مکار نہیں ہوں__❤✌ اسی لیے شائد کسی کا یار نہیں ہوں
 پلکوں کی اس لُکا چُھپی کو دل کہتا ہے پیار مان لوں نہ کہہ کر وہ ہنس دیتے ہیں کیسے میں انکار مان لوں
 رونے کو ہم بھی رو لیں مگر ڈر سا لگتا ہے کہیں پھر کوئی ہمدرد بن کے درد نہ دے جائے
 نہ جواب دے نہ سوال کر  مجھے چھوڑ دے  میرے حال پر تجھے کیا ملے گا تو ہی بتا  مجھے یوں الجھنوں میں ڈال کر۔
 ‏آپ اکثر جو ہم سـے کرتـے ہیں   وہ تو مطلب کی بات ہوتی ہـے
 میں چاہتا ہوں میرا نام لے کے روئیں لوگ.. میں چاہتا ہوں جوانی کی موت آئے مجھے
 سر رکھ کر رونے کو شانہ چاہیئے میں تنہا ہوں، تم کو آ جانا چاہیئے
 رہ نہ پاؤگے کبھی_بھلاکر دیکھ لو یقین نہیں آتا تو__آزما کر دیکھ لو ہر جگہہ محسوس__ہوگی ہماری ہی کمی اپنی محفل کو_کتنا بھی سجا کر دیکھ لو
 یقین تھا___بھول جاو گے مجھے.....!!!-               خوشی  ہوئی امید____ پر پورا اترے
 ,  وہ روٹھ گۓ ھم سے اس لۓ کہ نظریں نہیں ملاٸیں ھم نے۔ ۔ صاحب۔ ۔ یہ ھماری حیا تھی اور وہ ھمارا غرور سمجھ بیٹھے
 امید نہ کر اس دنیا میں کسی سے ہمدردی کی.. بڑے پیار سے زخم دیتے ہیں شدت سے چاہنے والے
 عـجیب ھوں کہ مـحبت شـناس.... ھو کر بھی اداس لگـتا نہـیں ھوں......... اداس ھـو کر بھی
 ‏مانگے جو کوئی مجھ سے تیرے نام کا صدقہ_! ‏میں خود کو پھینک دوں تیرے سر سے وار کر
 ہمیں پیار بھری شاعری نہیں آتی جناب  اگر کسی نے درد  سیکھنا ہو تو آ جائے محفل میں
 اُسکی آدھی تصویر دیکھ کر  .  میرے دل کو پورا سکون ملتا ہے
 کـــوشــش بہتـــــــ کــــی رازِ محبتـــــــ بیــاں نــا ہـــو ممکـــن کہـــاں ہـــے آگـــــــ لگـــے اور دُھـــواں نـا ہـــو
 محفلِ حسن تهی___میخانہ تها ساقی کا... شاعری عروج پہ پہنچی تو سامنے رقیب آ بیٹھا..
کبهی آنسوں کبهی سجدےکبهی ہاتهوں کا اٹھ جانا...! "اقبال" خواہشیں ادهوری ہوں تو رب کتنا یاد آتا ہے.
 احتراماً اُداس رہتے ہیں۔! ورنہ ہم بھول گئے ہیں اُنکو۔ جون ایلیاء
 "چار دن کی زندگی ہے نہ چل سر اٹھا اٹھا کر" "خدا نے ہزاروں نقشے مٹائے ہیں بنا بنا کر"
 پھر یوں ہوا کے اشکوں سے لینی پڑھی مدد ۔۔۔۔۔ لفظوں میں آ سکی نہ محبت ۔۔۔۔۔۔۔۔۔جناب کی ۔۔۔۔
 مجبور نہیں کرے گے تجھے وعدے نبھانے کیلئے تو ایک بار واپس آ جا اپنی یادیں لے جانے کیلئے.
 یوں بهی نہیں کہ میرے بلانے سے آ گیا جب رہ نہ سکا تو _ بہانے سے آ گیا
 آج تک قائم ہے اُس کے لوٹ آنے کی اُمید آج تک ٹِھہری ہوئی ہے زِندگی اَپنی جَگہ...؟
 وہ پرندہ... جسے پرواز سے فرصت ھی نہ تھی! آج  تنہا  ھے تو... میری  دیوار  پہ آ بیٹھا ھے.
 : نظر جِسے ڈھونڈتی تھی، وہ رستے میں یوں مِلے ہم نظر اُٹھا کے تڑپ گئے، وہ نظر جُھکا کے گُزر گئے
 میری دوستی کا باغ چھوٹا مگر پھول سارے گلاب رکھتا ہوں.💞 دوست کم ضرور ہیں مگر جو دوست رکھتا ہوں لاجواب رکھتا ہوں
  وقت نے ختم کردیے سارے وسیلے شوق کے  دل تھا، اُلٹ پلٹ گیا آنکھ تھی، بُجھ بُجھا گئی
 میں بھی کر لیتا هوں هر بار بھروسہ اس پر اور وہ شخص بھی __ هر بار بدل جاتا هے
نہ  رکھنا کبھی قدم محبت کے بازار عشاق بولتے ہیں جھوٹ سر عام 
 ھمیں پتا تھا انجام اے عشق کیا ھو گا  بس جوانی عروج پر تھی زندگی برباد کر بیٹھے
 جنہیں چُن لیا جائے ان پہ تبصرے نہیں کیے  جاتے  ان کا تو بس پھر احترام کیا جاتا ہے
 وہ ہی منتظر نگاہیں وہ ہی شامِ غم کا عالم ۔۔ ہم ازل سے دیکھ رہے ہیں تیری واپسی کی راہیں
 چلو محسن محبت کی نئی بنیاد رکھتے ہیں۔۔ خود پابند رہتے ہیں  اُسے  آزاد  رکھتے  ہیں۔۔ ہمارے خون میں رب نے یہی تاثیر  رکھی  ہے، برائی بھول جاتے ہیں اچھائی یاد رکھتے ہیں۔۔ محبت میں کہیں ہم سے گستاخی نہ ہوجائے، ہم اپنا ہر قدم اُسکے قدم کے بعد رکھتے ہیں
 پھر یوں ہوا کے اشکوں سے لینی پڑھی مدد ۔۔۔۔۔ لفظوں میں آ سکی  نہ محبت ۔۔۔۔۔۔۔۔۔جناب کی ۔۔
 جب کوئی نہ تھا تیرا تو بہت عزیز تھے ھم تجھے ...  نئےلوگ جو مل گئے، ھماری اوقات ھی نہ رہی 
 دوست تو رخصت ہو جاتے ہیں  پر دوستی کے پل ہمیشه یاد آتے ہیں  بھول جانا تو انسان کی فطرت ہے  پر کچھ دوست یادوں میں ہمیشه یاد آتے ہیں
 ﻣﯿﮟ ﺍﺩﺍﺱ ہوں ﻟﯿﮑﻦ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﻮ ﮨﻨﺴﺎ ﺩیتا ﮨﻮﮞ... 🙂 🌸 ﻣﺠﮫ ﺳﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺟﯿﺴﮯ ﻟﻮﮒ ﺩﯾﮑﮭﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﮯ
 دوستی محبت سے بہتر ہے کیونکہ دوستی انسان کو کبھی اکیلا نہیں چھوڑتی
 ‏جو مخلص ہیں بے وقوف تصور کیے جاتے ہیں یہاں مطلب پرست عقل مند کہلائے جاتے ہیں 
 مطلب والے دوست وفا کی قیمت کیا جانے  جو بیوفا دوست ہو وہ وفا کی قیمت کیا جانے  جسکو ملتا ہو ہر موڑ پر نیا دوست  وہ ہم جیسے دوستوں کی قدر کیا جانے
کچھ خاص جادو نہیں ہمارے پاس   بس باتیں دل سے کرتے ہیں
 کیا قصور ھے میرا جو تم نے مجھے یاد کرنا بھی چھوڑ دیا.              میری وفا میں کمی تھی یا میری غریبی اچھی نہیں لگی
 سب شکوے، شکایتیں، ناراضگیاں اور اسطرح کے سب کھیل بس اسی وقت تک ہیں جب تک سانسیں ہیں۔ سانسیں ختم ہر کھیل ختم 
 پلکوں کی حد کو  توڑ کر دامن پر آگرا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ایک اشک میرے صبر کی توہین کر گیا ۔
 وہم ہی سہی ہم کو ہو گئی خطا ہم سے۔۔ بس نہ کھائیے قسمیں تھا غلط گمان اپنا۔۔              داغ دہلوی
 اپنےقدموں پہ بھروسہ نہیں جن کو ہم سےٹکرانےکی بات کرتےہیں
 “ وقت نے ختم کردیے سارے وسیلے شوق کے  دل تھا، اُلٹ پلٹ گیا آنکھ تھی، بُجھ بُجھا گئی
 مجبور نہیں کرے گے تجھے وعدے نبھانے کیلئے تو ایک بار واپس آ جا اپنی یادیں لے جانے کیلئے.
 میری دوستی کا باغ چھوٹا مگر پھول سارے گلاب رکھتا ہوں.💞 دوست کم ضرور ہیں مگر جو دوست رکھتا ہوں لاجواب رکھتا ہوں.
 سبھی سے میں نے بگاڑی ہوئی تھی اس کے لیے  وہ میرے عشق میں حالانکہ مبتلا بھی نہ تھا
مجھ کو بتا رہی تھی وہ تصویر پھاڑ کر اس سے بچھڑ رہا ہوں تو کیسا لگوں گا
 کبھی ھم سے بھی دو پل کی ملاقات کر لیا کرو کیا پتا آج ھم ترس رھے ھیں کل تم ڈھونڈتے رہ جاؤ
 مجھے اُلفت تجھی سے ھے ورنہ لوگ تجھ سے بھی خوبصورت ہیں
 جتنا زوال سہنا تھا سہ لیا ...!! اب تاریخ لکھئ جائے گی اپنے عروج کی.
 تعجب ہے میرے آنے سے پہلے  تجھے پہلی محبت ہو چکی تھی
 ‏ایک تم اور ایک محــــــبت تمہــــــاری..❤ بس ان دونوں لفظــــــوں میں ہے دنیــــــا ہمــــــاری
 میں تیرا ظرف دیکھتا رہوں گا تو میری خاک کا تماشہ کـــــــر
 آج تیرے لیے تحفہ لینے نکلے شہر سے  کمبخت خود سے سستا کچھ نہ ملا
 حقیقت میں تمہیں میں ماسہروں سے ملاوں گا اک دن۔۔۔ تم چلے آو کبھی شہر راولاکوٹ کی طرف
 ایک تھا وقت آپ بھی مجھ پر یاد ہے بہت مہربان ہوئے تھے
 مل کر بھی جو کبھی نہیں ملتا  ٹوٹ کر دل اسی سے ملتا ہے
 ‏اتنی شدت سے نہ کر ترکِ تعلق کا سوال ‏‏یہ نہ ہو ہم سے تیری بات نہ ٹالی جائے
  لوگ کہتے ہیں کہ  محبت ایک بار ہوتی ہے❤ ❤میں جب جب تجھے دیکھوں  مجھے ہر بار ہوتی ہے
 وہ میرا تھا میرا ہے اور میرا ہی رہے گا... قائم ہے اس بات پہ دل ڈھیٹ کہیں کا..
 ‏تم نے ہی تو کہا تھا نکل جاؤ زندگی سے اب جب نکل گئی ہوں تو مر کیوں رہے ہو
 میں تجھے اپنا سمجھ کر ہی تو کچھ کہتا ہوں  یار تو بھی میری باتوں کا برا مانتا ہے
 عاشقوں کی خستگی بد حالی کی پروا نہیں  اے سراپا ناز تو نے بے نیازی خوب کی  میر تقی میر
 وہ کہتے ہیں ایک وقت ہوتا ہے قبولیت کا  حیران ہوں کس وقت نہیں مانگا اس کو🔥
 در سے تو وہ لوٹ گیا ۔۔۔ لیکن دستکوں کے نشاں چھوڑ گیا
 کس طرح ختم کریں أن سے ____دل کا رشتہ❤ جن سے ملنے کا سوچیں بھی تو دنیا بھول جاتے ھیں❤
 ‏یقــــــــــین کرو کوئی کسی کا نہـــــیں ھوتا دل کے دو حــــــرف ہیــــــــــں                            وہ بھی جدا جـــــــدا
 نصیب اچھے نہ ہوں تو خوبصورتی کا کیا فائدہ دلوں کے شہنشاہ اکثر فقیر ہوا کرتے ہیں
 اللہ رے کیا نمک ہے آدم کے حسن میں بھی اچھی لگی نہ ہم کو خوش صورتی پری کی میر تقی میر
 نہ کوئی عہد نبھائے نہ ہمنوائی کرے اسے کہہ دو تسلی سے بیوفائی کرے۔
 ﺑﺎﺭﮔﺎﮦ ﻋﺸﻖ ﻣﯿﮟ____ﻣﻘﺒﻮﻝ یوں ﮨﻮﺋﮯ ﺧﻮﺩ ﺳﮯ ﺑﭽﻬﮍ ﮔﺌﮯ ﺗﯿﺮﯼ ﻗﺮﺑﺖﮐﮯ ﺷﻮﻕ ﻣﯿﮟ
 محسوس جب ہوا کہ سارا شہر ھم سے جھلنے لگا ہے تبھی  سمجھ آ گیا اپنا نام بھی چلنے لگا ہے،،
 کوشش تو کر رہا تھا کسی کو خبر نہ ہو  چہرہ بتا رہا تھا__ سب کچھ گنوا دیا.....
 کوئی صورت نکال لیتے ہیں آؤ  سکہ اچھال  لیتے    ہیں ڈال لیتے ہیں ناؤ میں ساحل ناؤ  دریا  میں  ڈال  لیتے ہیں دل پھسلتا ہے ایک لمحے میں ہم سنبھلنے میں سال لیتے ہیں دوست ملتے  نہیں ہیں کیا کیجے سانپ ملتے ہیں، پال لیتے ہیں
 اے وعدہ فراموش تیری خیر ہو لیکن اک بات میری مان تو وعدہ نہ کیا کر
 ہم نے خواب میں__موت دیکھی😢 رونے والوں میں تم نظر نہیں آۓ
 دل پر  خوف  خدا  غالب  آجاتا ہے ورنہ بندوں کی کوئی اوقات نہیں_
 شوق ہے  تجھے  تو  آزما لے  ہمیں😊👍 مغرور کا غرور ہر بار توڑا ہے ہم نے
 اک دوسرے سے پوچھتی پھرتی ھیں لڑکیاں  لڑکا بہت  حسین  ھے محبوب  کس کا ھے؟
 مت پوچھو کہ___کیسے ہیں ہم . سدا یاد رہیں گے_کچھ ایسے ہیں ہم
 کتنا کچھ جانتا ہو گا وہ شخص میرے بارے میں جس نے مجھے ہنستے ہوے دیکھا  پھر بھی پوچھا  اداس کیوں  ہ
 کچھ درد کچھ لوگ کچھ وعدے ایسے بھی ہوتے ہیں  کہ جو انسان کو ہمیشہ کے لیے خاموش کردیتے ہیں
 اے قیس جنوں پیشہ انشاؔ کو کبھی دیکھا  وحشی ہو تو ایسا ہو رسوا ہو تو ایسا ہو  دریا بہ حباب اندر طوفاں بہ سحاب اندر  محشر بہ حجاب اندر ہونا ہو تو ایسا ہو
 اے دوست ہم تیرا چمن چھوڑ چلے  ایسا لگا جیسے مسافر وطن چھوڑ چلے
 ﯾﮧ ﺗﺮﮮ ﺑﺲ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﻭﮒ، ﻣﯿﺎﮞ ﭼﮭﻮﮌ ﺍﺳﮯ ﺗُﻮ ﺑﺪﻥ ﭼﺎﭦ ﮐﮯ ﺍﻟﻔﺖ ﺳﮯ ﻣﮑﺮ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﺎ جون ایلیا
 یار سے دوررہ کر جینا بھی کوئی جینا ہے درد سے بھرا دل زخموں سے بھرا سینہ ہے
 مانگتا ہوں میں اسے دعاؤں میں    رات  دن   اے اللہ مجھے میرا ہم درد  ہم سفر لٹا دے
 تیری دوستی سے تھو ڑا بدگمان ہوں میں یوں ہی کئی دنوں سے پریشان ہوں میں
 کوئی ایسا شخص بھی دے مولا جو مجھے کھونے سے ڈرتا ہو❤
بہت سے الفاظ ہیں مجھ میں خوبصورت لیکن کتابوں کی طرح میں اکثر خاموش رہتا ہوں
کرو گے اک دن تم بھی ہم سے ملنے کی آرزو پاؤ گے ہم کو بس کبھی خیالوں کبھی سوالوں میں
 کتنی دلکش ہے لاپرواہی اس کی۔۔۔۔۔❣ میری ساری محبت فظول ہو جیسے
 ‏خُدا نوازے تُجھے مُجھ سے بہتر مگر  تو  میرے  لیے  ترسے 
 کسی نہ کسی سے وہ نبھائے گی ضرور۔۔۔۔۔❣ چاٸے جوٹھی جو پی گئ تھی میری۔
 اِک تم ہی ہو______جو دل میں سما گے ہو❤❤ ورنہ کوششں_____تو ہزاروں نےکی تھی
 مانا کہ تو خوب____بہت خوب ہے مگر۔۔۔۔۔❣ میں بھی ہوں بہت خاص کسی خاص سے پوچھ۔۔۔۔
 مجھے کہنا نہیں آتا....!! اب سمجھنا سیکھ جاؤ تم.
عزت بناو                   شریکوں تعلق تےکنجرادےوی ڈھیر ہوندن
 خاک ہوں آپ کی ہتھیلی پر۔۔۔۔۔❣   جیسے چاہے اُڑائیے صاحب
 میں بھی کر لیتا هوں هر بار بھروسہ اس پر ❤ اور وہ شخص بھی هر بار بدل جاتا هے
  اک مدت کے بعد ___سائیں "  " ہم مسکرائے بهی تو اپنےہی حال پہ 
 دوسروں کی زندگیاں جہنم بنا کر... سجدوں میں جنت مانگتے ہیں لوگ.
 صاحب کبھی خاموشی کی چیخ و پکار سنی ھے۔۔۔۔۔❣ نہیں نا؟؟ پھر تم کیا جانو صبر کی حقیقت
 میں اسکے غم کو لے کر جب سُپردِ خاک ہوجاوں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جہاں والوں وفا میری اسے خیرات کردینا۔
 میں نے اسکا خط رکھ دیا پڑھا ہی نہیں۔۔۔۔۔❣  بھول _ جانے کا مشورہ ہی لکھا ہوگا
 بے پروا محبت ہے مجھے۔ ایک لا پروا شخص سے۔
 فقط پھولوں کے_ بکھرنے تک ہے تماشا انکا ...!!! میں تتلیوں کی محبت کو خوب جانتا ہوں 
 کچھ تو سنبھال کر رکھتے صاحب۔۔۔۔ ❣ تم نے تو مجھے بھی کھو دیا۔۔۔
 ترسو گے تم بھی ایک دن یہ سوچ کر۔۔💔   وہ اپنا بھی نہ تھا اور احساس بھی اپنوں سے زیادہ کرتا تھا
 ﺟﺐ ﺁﻧﺴﻮ ﮔﺮﻧﺎ ﺑﻨﺪ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ۔۔۔۔۔❣ ﺗﻮ ﺗﮑﻠﯿﻒ ﻏﺼﮧ ﺑﻦ ﮐﺮ ﺑﺎﮨﺮ ﺁﺗﯽ ھے۔۔۔
 حالات کی ایک ضرب نے صورت ہی بدل دی  مجھ سے میری تصویر ذرا بھی نہیں ملتی